شفاف مصنوعی ناخنوں کے اندر زندہ چیونٹیاں رکھنافیشن بن گیا

ماسکو: روس کے ایک بیوٹی پارلر نے شفاف مصنوعی ناخنوں کے اندر زندہ چیونٹیاں رکھ کر اسے ایک فیشن کے طور پر متعارف کرایا جس پراب سوشل میڈیا پر شدید تنقید کی جارہی ہے۔ماسکو نے نیل سنی بیوٹی سیلون نے خواتین کے لیے ایسے کھوکھلے مگر شفاف مصنوعی ناخن بنائے ہیں جنہیں وہ اپنے اصل ناخنوں سے جوڑ سکتی ہیں۔ اس کے اندر سیلون والوں نے زندہ چیونٹیاں ڈال دی ہیں جو اندر گھومتی رہتی ہیں۔اس کے بعد خواتین اور خود بیوٹی پارلر والوں نے بھی انسٹا گرام اور فیس بک پر چیونٹی بھرے ناخنوں کی تصاویر اور ویڈیو پوسٹ کرنا شروع کردیں۔ سیلون والوں نے بڑے فخر سے انہیں اپنی جدت قرار دیا لیکن معاملہ الٹا ہوگیا اور سیلون کے 18 لاکھ فالوور کی اکثریت نے اس عمل پر شدید تنقید شروع کردی ہے۔کئی افراد نے اسے بے زبان جانوروں سے زیادتی قرار دیا ہے اور کہا کہ انہیں ناخنوں میں بند کرکے کونسی خوشی محسوس ہوسکتی ہے؟ ایک اور انسٹاگرام فالوور نے اسے ’شرمناک‘ قرار دیا ہے۔ اس پر سیلون نے کہا کہ یہ کیڑے ہیں کوئی بڑے جانور نہیں۔ اس پر لوگوں نے مزید تنقید کرتے ہوئے کہا کہ کیا آپ کیڑوں کو جاندار نہیں سمجھتے؟اس کے بعد بیوٹی پارلر والوں کو اپنی غلطی کا احساس ہوا اور انہوں نے کہا کہ چیونٹیوں کو ناخنوں سے نکال کر چھوڑ دیا گیا ہے تاکہ وہ سانس لے سکیں۔ اس کے باوجود بھی لوگوں کا غصہ ٹھنڈا نہیں ہوا اور اس عمل پر سوشل میڈیا پر شدید تنقید جاری ہے۔

کیٹاگری میں : صحت

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں