انفینٹ فارمولا کو دودھ یا دودھ کا متبادل لکھنا جرم

لاہور(نیوزڈیسک) ڈی جی فوڈ اتھارٹی کیپٹن(ر) محمد عثمان نے ٹیکنکل ونگ کی رپورٹ پرانفینٹ فارمولہ کمپنیز کے خلاف ایکشن کی منظوری دے دی ہے۔تفصیلات کے مطابق پنجاب فوڈ اتھارٹی کے قوانین کی خلاف ورزی کرنے والی انفینٹ فارمولا کمپنیوں کے خلاف ایکشن پلان تیار کر لیا گیا ہے۔ ڈی جی فوڈ اتھارٹی کی سربراہی میں اتوار کے روز منعقدہ اجلاس میں انفینٹ فارمولا بنانے والی کمپنیوں کو دیا گیا بزنس ایڈجسٹمنٹ ٹائم ختم ہوتے ہی کریک ڈاؤن شروع کر نے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔
یاد رہے کہ انفینٹ فارمولا بنانے والی کمپنیوں کو لیبل درست کرنے کے لیے پنجاب فوڈ اتھارٹی نے 20 ستمبر تک کی مہلت دے رکھی تھی۔کیپٹن(ر) محمد عثمان نے ٹیکنیکل ونگ کی کارکردگی کے متعلق تفصیلی بریفنگ لیتے ہوئے یہ احکامات جاری کیے ہیں۔ ڈی جی فوڈ اتھارٹی کا کہنا تھا کہ سپریم کورٹ کے حکم کے مطابق کسی بھی قسم کے انفینٹ فارمولا کو دودھ یا دودھ کا متبادل لکھنا جرم ہے۔ انفینٹ فارمولا کمپنیاں ہسپتالوں میں تشہیری مقاصد کے لیے مفت سیمپل بھی نہیں دے سکیں گی۔انہوں نے وارننگ جاری کر تے ہو ئے کہا کہ بزنس ایڈجسٹمنٹ ٹائم کے دوران اصلاح نہ کرنے والی کمپنیوں کا تمام سٹاک مارکیٹ سے اٹھوا لیا جائے گا۔ سٹاک اٹھانے کے علاوہ خلاف ورزی کرنے والی کمپنی کے خلاف قانون کے مطابق مزید کاروائی بھی عمل میں لائی جائے گی۔ ڈی جی فوڈ اتھارٹی کیپٹن(ر) محمد عثمان نے مانیٹرنگ اور ویجیلنس ونگ کو ہسپتالوں اور مارکیٹوں کی خفیہ نگرانی کرنے کی ہدایات جاری کی ہیں۔ انہوں نے اس عزم کا
اظہاکیا کہ کسی بھی پراڈکٹ یا کمپنی کو دھوکہ دہی سے اشیائے خورونوش فروخت کرنے کی صورت میں سخت سے سخت کاروائی کا سامنا کرنا پڑے گا۔ مزید برآں ڈائر یکٹر جنرل پنجاب ٖفوڈ اتھارٹی کی ہدایت پر فوڈ سیفٹی ٹیموں نے صوبہ بھر میں قلفی پروڈکشن ہاؤسز کیخلاف دوسرے روز بھی کریک ڈاؤن جاری رکھا۔
تفصیلات کے مطابق صوبہ بھر میں مصنوعی فلیورزکے استعمال اور صفائی کے ناقص انتظامات پر کارروائیاں کر تے ہوئے 24قلفی پروڈکشن یونٹس کو سیل کر دیا۔سپیشل مہم کے دوسرے روز صوبہ بھر میں کھویا قلفی بنانے والے 188 پروڈکشن ہاوسز کی چیکنگ کی گئی۔فوڈ سیفٹی ٹیموں نے قلفی یونٹس کو مصنوعی مٹھاس کے استعمال،غلط لیبلنگ،غیر معیاری خام مال ،ناقص صفائی،گندے اور بد بودار ماحول کی بناء پرسربمہر کیا۔
ڈی جی فوڈ اتھارٹی کیپٹن (ر) محمد عثمان کے مطابق لاہور ریجن میں 57 پروڈکشن ہاوسز کی چیکنگ کے دوران 10کو سیل، 15 کو جرمانہ اور 25 کو وارننگ نوٹس جاری کیے گئے ہیں جبکہ راولپنڈی ریجن میں 4 قلفہ پروڈکشن یونٹس کو سر بمہر، 16 کو جرمانہ جبکہ26 کو وارننگ نوٹس جاری کیے ہیں ۔ اسی طرح ساوتھ ریجن میں کارروائیاں کر تے ہو ئے 10 قلفہ پروڈکشن یونٹس کوسیل جبکہ 20 کو جرمانہ اور32 کو وارننگ نوٹس جاری کیے گئے ہیں۔ ڈائریکٹر جنرل پنجاب فوڈ اتھارٹی کا کہنا تھا کہ صوبہ بھر میں روزانہ لاکھوں کی تعداد میں کھویا قلفیاں فروخت کی جاتی ہے۔قلفی پروڈکشن میں ناقص اور غیر معیاری اجزاء کا استعمال متعدد بیماریوں کا سبب بنتا ہے۔
کیپٹن(ر) محمد عثمان کا مزید کہنا تھا کہ قلفی کی مدت استعمال (شیلف لائف) بارے تحریر کرنے میں دھوکہ دہی پر بھی کاروائیاں کی جا رہی ہیں۔ انھوں نے کہا کہ قلفی پروڈکشن یونٹس کی چیکنگ مہم تسلسل کے ساتھ جاری رکھی جائے گی۔ یاد رہے کہ گزشہ روز کی گئی کاروائیوں میں 5 پروڈکشن یونٹ سیل بھی کیے گئے تھے۔

کیٹاگری میں : صحت

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں