نوجوان کا انسانی کھوپڑی کی طرح دکھنے کے لئے انتہائی خطرناک اقدام

کولمبیا: جنونی افراد منفرد نظر آنے کے لیے ہزاروں ڈالر خرچ کرکے اپنا حلیہ تبدیل کرواتے رہتے ہیں لیکن کولمبیا کے ایک شخص کی خواہش ہے کہ ان کا پورا چہرہ انسانی کھوپڑی جیسا نظر آئے اور اس کے لیے انہوں نے انتہائی مہنگے اور خطرناک آپریشن بھی کرائے ہیں۔ اس شخص کا پورا نام ایرک یانر ہِنکیپی ریمرز ہے لیکن وہ کالاکا اسکل نے نام سےمشہور ہیں۔ وہ جسم پر ٹیٹو گودنے کے ماہر ہیں اور انہیں بچپن سے ہی انسانی کھوپڑیاں پسند تھیں۔ اپنی والدہ کی وفات کے کچھ عرصے بعد انہوں نے اپنے چہرے کو تبدیل کروانا شروع کیا۔
سب سے پہلے کالاکا نے اپنی ناک کا نصف حصہ کٹوادیا کیونکہ کھوپڑیوں پر مکمل ناک نہیں ہوتی۔ اگلے مرحلے میں کان ختم کرنے کی باری تھی اور اس کےلیے اس نے کان کے لوئیں کٹوادیں اور یوں لگتا ہے کہ اس کے کان غائب ہوچکے ہیں۔لیکن سر کی تبدیلی کا یہ سلسلہ یہیں ختم نہ ہوا بلکہ انہوں نے اپنی زبان کٹواکر دو حصے کروائے اور اس پر نیلاہٹ مائل بھورا رنگ کروادیا۔ اس کے بعد دانتوں کے اوپر کے حصوں پر ابھار دکھانے کےلیے اس نے ٹیٹو سے وہاں رنگ کروادیا۔اس کے بعد کالاکا اسکل ذرائع ابلاغ میں مشہور ہوگئے لیکن عوام نے ان پر شدید تنقید کرتے ہوئے کہا کہ آخر کھوپڑی نما دکھائی دینے کےلیے ناک اور کان کیوں کٹوائے گئے۔ اس پر انہوں نے جواب دیا کہ انسانی کھوپڑی جیسا دکھائی دینا ان کی شدید خواہش ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں