عالمی بنک پاکستان میں نئی حکومت کے اصلاحاتی پروگرام میں تعاون کیلئے تیار ہے

اسلام آباد ۔ (نیوزڈیسک) عالمی بینک نے کہا ہے کہ وہ پاکستان میں نئی حکومت کے اصلاحاتی پروگرام میں تعاون کیلئے تیار ہے، یہ اصلاحاتی پروگرام ملک سے غربت کے خاتمہ اور خوشحالی کے فروغ کے سلسلہ میں معاشی استحکام اور تیز نمو کیلئے ضروری ہے۔ عالمی بینک کے نئے نائب صدر برائے جنوبی ایشیاء ہارسٹوگ شیفر نے حکومتی نمائندوں سے ملاقات میں اس عزم کا اظہار کیا۔ انہوں نے پاکستان کی ترقیاتی ترجیحات اور اصلاحاتی ایجنڈے کا جائزہ لیا۔ انہوں نے کہا کہ انہیں اپنے دورہ میں کروڑوں پاکستانی عوام بالخصوص نوجوانوں کی ضروریات کو سمجھنے کا موقع ملا کہ کس طرح صحت، غذائیت، تعلیم،، ہنر اور ڈیجیٹل اکانومی کے شعبوں میں سرمایہ کاری میں معاونت فراہم کی جا سکتی ہے۔ اپنے 2 روزہ دورہ اسلام آباد کے دوران انہوں نے وزیر خزانہ، وزیر خارجہ اور مشیر برائے تجارت، ٹیکسٹائل، صنعت و پیداوار سے ملاقاتیں کیں۔ عالمی بینک کے نائب صدر نے کہا کہ وہ پاکستان کی نئی حکومت کی جانب سے انسانی ترقی، روزگار، کاروبار میں آسانی، بہتر علاقائی رابطہ کاری، انفراسٹرکچر کی ترقی اور پانی و ماحولیات کے شعبوں میں سرمایہ کاری کے پروگرام سے متاثر ہوئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہم وفاقی اور صوبائی حکومتوں کو اصلاحاتی ایجنڈے کے نفاذ میں معاونت فراہم کرنے کیلئے تیار ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں