پاکستان کے کل قرضوں میں ہوشربا اضافہ ہوگیا

کراچی (نیوزڈیسک) پاکستان کے کل قرضوں میں ہوشربا اضافہ ہوگیا، اسٹیٹ بینک کی جانب سے حکومتی قرضوں اور واجبات کی تفصیلات جاری کردی گئیں۔ تفصیلات کے مطابق گزشتہ 5 برس کے دوران پاکستان کے کل قرضوں کے حجم میں ہوشربا اضافہ ہوا ہے۔ مسلم لیگ ن کی سابقہ دور حکومت کے 5 برس کے دوران پاکستان کے کل قرضوں کا حجم دگناہوگیا۔ جبکہ اب پاکستان میں 25 جولائی کے بعد آنے والی نئی حکومت کو بھی قرضوں کی ادائیگی کے بہت بڑے بحران کا سامنا ہے۔ جبکہ حکومت پر پاکستان کی ابتر معاشی صورتحال کے باعث مزید قرضے لینے کیلئے بھی دباو ہے۔ دوسری جانب بدھ کے روز اسٹیٹ بینک آف پاکستان نے مالی سال 18-2017 کے اختتام پر حکومت کے قرضوں اور واجبات کی تفصیلات جاری کردی ہیں۔
مرکزی بینک کی جانب سے جاری اعداد و شمار کے مطابق حکومت کے قرض اور واجبات کا حجم 29 ہزار 861 ارب روپے تک پہنچ گیا ہے۔ اسٹیٹ بینک کے مطابق ایک سال کے دوران حکومتی قرض اور واجبات میں 18.90 فیصد اضافہ ہوا، حکومت کے ذمے قرض اور واجب الادا رقم مجموعی قومی پیداوار (جی ڈی پی) کا تقریباً 87 فیصد ہے۔ مرکزی بینک کے اعداد و شمار کے مطابق حکومت کا مقامی قرض 16 ہزار 415 ارب روپے ہے جبکہ حکومتی اداروں کا قرض 1068 ارب روپے رہا۔ اسٹیٹ بینک کے مطابق حکومت کا بیرونی قرض 10 ہزار 935 ارب روپے رہا۔ مرکزی بینک کے مطابق پاکستان پر 1442 ارب روپے کے واجبات ہیں اور گزشتہ مالی سال کے دوران قرضوں اور واجبات پر تقریباً 475 ارب روپے سود ادا کیا گیا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں